ہندوستان نے دعوی کیا ہے کہ مارے گئے عسکریت پسندوں میں ذاکر موسیٰ کی قیادت والی انصار غزوة الہند کا ڈپٹی چیف بھی شامل ہے۔

ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر کے ضلع پلوامہ میں آج ہفتہ کی صبح ہونے والے ایک مختصر مسلح تصادم میں 6 جنگجو مارے گئے۔ مہلوک جنگجوﺅں میں ذاکر موسیٰ کی قیادت والی انصار غزوة الہند کا ڈپٹی چیف بھی شامل ہے۔

کشمیر زون پولیس نے اپنے آفیشل ٹویٹر ہینڈل پر ایک ٹویٹ میں کہا 'اونتی پورہ پلوامہ میں ہونے والے مسلح تصادم میں 6 عسکریت پسند ہلاک ہو گئے۔

دریں اثنا عسکریت پسندوں کی ہلاکت کے خلاف قصبہ ترال اور اس سے ملحقہ علاقوں میں مقامی نوجوانوں نے سڑکوں پر نکل کر احتجاجی مظاہرے شروع کردیے ہیں۔ انتظامیہ نے احتیاطی طور پر ضلع پلوامہ میں موبایل انٹرنیٹ سروس منقطع کرادی ہیں۔ اس کے علاوہ ریلوے حکام نے بانہال اور سری نگر کے درمیان چلنے والی ریل خدمات معطل کردی ہیں آج کی فائرنگ اور ہلاکتوں کے بعد وادی میں حالات ایک مرتبہ پھر کشیدہ ہو گئے ہیں۔

دوسری جانب شمالی کشمیر کے ضلع کپواڑہ میں لائن آف کنٹرول (ایل او سی) پر جمعہ کے روز پاکستان کی فائرنگ کی وجہ سےہندوستانی فوج کے دو جونیئر کمیشنڈ آفیسر (جے او سی) ہلاک ہوگئے

واضح رہے کہ ہندوستان اور پاکستان ایک دوسرے پرلائن آف کنٹرول میں فائرنگ کے الزامات عائد کرتے رہتے ہیں۔